غزل

کروں حمد و ثنا

افضال اختر قاسمی دربھنگوی

کروں حمد وثناء ان کی جنہوں نے زباں دی ہے۔
بےمانگے زندگی دی جینے کی پھر ادا دی ہے۔

حنا بندی چمن کی ہم نے اپنے لہو سے کی۔
وفا کی سب کہانی دوستو نے بھلا دی ہے۔

بڑا احساں ترا اے دل شکن ہم نوا تو نے۔
مرے مغرور دل کو اس کی وقعت بتا دی ہے۔

کسی سے کیا گلہ کرنا جو ٹوٹا یہ دل اپنا۔
تھے ہم قابل اسی کے ہی جو اس نے دغا دی ہے۔

نہیں زیبا تکبر مشت خاکی کو اے ہمدم۔
خدا نے سرکشوں کی ہستی سن لو!مٹا دی ہے۔

مرے منصف عدالت بھی تری کیا نرالی ہے۔
جو ناطق کو نکرده جرم کی ہی سزا دی ہے۔

استاذ شعبہ عربی: مدرسہ اسلامیہ عربیہ فیض الاسلام،جئی،میرٹھ،یو پی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *