123

مشہور شاعر افضل منگلوری اور کنال دانش کے اعزاز میں شعری نشست کا انعقاد

نئی دہلی:معروف ادبی تنظیم پرواز کے زیرِ اہتمام مشہور شاعر افضل منگلوری اور کنال دانش کی دلی آمد پر ان کو استقبالیہ پیش کیا گیا اور ان کے اعزاز میں شعری نشست کا انعقاد کیا گیا۔ پرواز کے بانی صدر ڈاکٹر رحمان مصور (اسوسی ایٹ پروفیسر، شعبہئ ہندی، جامعہ ملیہ اسلامیہ) نے خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ افضل منگلوری محض مشاعروں میں ترنم سے پڑھنے والے شاعر ہی نہیں ہیں بلکہ زبان و بیان پر غیر معمولی قدرت رکھتے ہیں۔ آپ کا تعلق علمی اور صوفیانہ گھرانے سے ہے۔ آپ کا کلام کئی شعری اصناف کو محیط ہے۔ بالخصوص فی البدیہہ شعر گوئی میں آپ کو کمال کا درجہ حاصل ہے۔ کنال دانش کا تعلق ناگپور سے ہے۔ لیکن ایک ایسے نوعمر شاعر ہیں کہ آج کے اس فرقہ پرستی کے دور میں جس طرح مذہبی تعصب و تنفر اور اردو زبان کے ساتھ دشمنی کا رویہ فروغ پذیر ہو رہا ہے کنال دانش نئی پیڑھی کے ان نمائندہ شعرا میں ہیں جو اپنی شاعری کے ذریعے ان تمام زہریلے پروپیگنڈوں کا دندان شکن جواب دیتے ہیں۔
ان دونوں مہمانان کے اعزاز میں ایک مختصر اور منتخب شعری نشست کا انعقاد کیا گیا۔ جس کی صدارت ڈاکٹر بسمل عارفی اور نظامت کے فرائض ڈاکٹر معین شاداب نے انجام دیے۔اس شعری محفل میں مشہور یوٹیوب چینل ”قافیہ“ کے روحِ رواں یاسین انور، جان محمد اور ڈاکٹر حیدر علی بھی شریک تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں