65

مسلم مسائل پرآئی پی ایس عبدالرحمن کی دستاویزی کتاب کااجرا


نئی دہلی:(قندیل نیوز)
ملک کے موجودہ حالات میں مسلمانوں کومایوس ہونے کی بجاے ہمت وحوصلہ سے کام لے کر سماجی سطح پراپنے حالات کوبہتربنانے کی سمت میں منظم کوششیں کرنی چاہئیں ـ ان خیالات کااظہار انڈیااسلامک کلچرل سینٹرمیں سچرکمیٹی ورنگاناتھ مشراکمیشن کی رپورٹس کے بعدسے اب تک ہندوستانی مسلمانوں کے سماجی احوال ومسائل پرتفصیلی روشنی ڈالنے والی آئی پی ایس عبدالرحمن کی کتاب Denial and Deprivation: Indian Muslims after the Sachar Committee and Rangnath Mishra Commission Reports کے اجراکےموقع پر مختلف مقررین نے کیا ـ انھوں نے کہاکہ موجودہ حالات میں ہمیں سیاسی وابستگیوں سے اوپراٹھ کرملک کی سلامتی اورسماجی ڈھانچے کوبچانے کے لیے متحدہ کوششیں کرنی ہوں گی ـ مقررین نے مصنف کی اس دستاویزی کاوش پرانھیں مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ سماج میں ایسے باہمت اورجری نوجوانوں کی ضرورت ہے جوہرقسم کے خوف اوراندیشوں سے بے پرواہوکرملک کے دبے کچلے اورپسماندہ طبقات کی فلاح اوران کے مسائل کے حل کے لیے آوازاٹھائیں ـ ان کاکہناتھاکہ ہندوستان ایک جمہوری ملک ہے اوراس کی جمہوری روح کاتحفظ تمام شہریوں کی ذمے داری ہے لہذاہمیں مذہب وملت سے اوپراٹھ کر تمام دبے کچلے طبقات کے انصاف کے لیے لڑناہوگاـ قبل ازاں مصنف کتاب نے کتاب کاتعارف پیش کرتے ہوئے بتایاکہ اس کتاب میں سچرکمیٹی ورنگاناتھ کمیشن کی رپورٹس اورسفارشات کاجائزہ لینے کے ساتھ تب سے لے کر اب تک کے ملکی حالات کاتفصیلی جائزہ لیاگیاہےـ اس پروگرام میں معروف دانشورڈاکٹرظفرمحمود،سابق آئی اے ایس شاہ فیصل، آرجے ڈی کے ممبرپارلیمنٹ (راجیہ سبھا)پروفیسرمنوج کمارجھا، سابق ڈی آئی جی چھتیس گڑھ ڈبلیوانصاری وغیرہ نے اظہارخیال کیا،جبکہ مختلف طبقوں سے تعلق رکھنے والے اہل علم ودانش بڑی تعدادمیں موجودرہےـ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں