49

غزل


حنان حانی
کہیں پہ کوئی بھی روئے تو ساتھ روتے ہیں
کسی کا غم ہو برابر شریک ہوتے ہیں

ہمیں تو آنکھ لگانا بھی مہنگا پڑتا ہے
یہ کون لوگ ہیں جو اچھی نیند سوتے ہیں

کسی کا کام تھا اور جرم اپنے سر آیا
پرائے داغ بھی اپنی قبا سے دھوتے ہیں

خلافِ وقت کوئی کام بھی نہیں کیا اور
ِ نظامِ وقت تری چال پر بھی روتے ہیں

ہم ایسے حانی کہاں جانتے تھے خوشبو کو
جو آج عشق کے آنچل میں گُل پروتے ہیں

کیٹاگری میں : غزل

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں