56

دخل در متشاعرات

دانش نقوی
عام طور پر متشاعرات بھی شاعرات کی طرح ہی ہوتی ہیں یعنی بظاہر ان میں کوئی خاص فرق نظر نہیں آتا
یعنی متشاعرات بھی اوریجنل شاعرات کی طرح زیادہ خوبصورت بھی ہوسکتی ہیں کم خوبصورت بھی اچھے اخلاق کی مالک بھی ہو سکتی ہیں بد اخلاق بھی زیادہ میک اپ کی شوقین بھی ہو سکتی ہیں کم میک اپ کی بھی ـ
ایک عام انسان کے پاس کوئی پیمانہ نہیں ہے جس کی بنا پر وہ فیصلہ کرے کہ مذکورہ کلام مذکورہ شاعرہ کا ہے بھی یا نہیں۔
سچائی جاننے کےلیے کافی ریسرچ اور مغز ماری کرنے کے بعد متشاعرات کی کچھ نشانیاں اکٹھی کی ہیں جو آج دوستوں کے ساتھ شئیر کرنے جا رہا ہوں اختلاف کرنا قارئین کا حق ہےـ
1 متشاعرہ کبھی بھی کسی شاعرہ سے اس حد تک دوستی نہیں کرے گی کہ اس سے کال پہ بھی بات ہو کیونکہ اگر اگلی اوریجنل شاعرہ ہو اور اس نے کال پہ شعر کے متعلق کچھ پوچھ لیا تو جواب کون دے گا؟؟؟
(کال پہ بات ہو بھی جائے تو شعر کے بارے بات نہیں ہوگی)
2وہ ہر وقت سنجیدہ کمنٹس کرے گی سنجیدہ پوسٹیں لگائے گی کیونکہ اس کے نزدیک شاعر ہونا کوئی ماورائی خوبی ہے جس کی بنا پر شاعر کو عام لوگوں کے سامنے سنجیدہ رہنا چاہیےـ
3 آپ کبھی بھی کسی متشاعرہ کی پوسٹ پر کمنٹ میں کوئی سوال پوچھ لیں اس کا جواب فورا نہیں ملے گا کیونکہ وہ “بھائی جان” سے پوچھیں گی اور “بھائی جان” آگے سے کچھ بتائیں گے تو ہی جواب ملے گا ناں۔
3اگر کاپی پیسٹ کرتے ہوئے کسی متشاعرہ کا شعر خارج از وزن ہوجائے اور آپ اسے بتا دیں گے کہ یہ خارج ہے تو وہ برا محسوس کر جائے گی اور “بھائی جان” سے پوچھ کر فورا آپ کو کوئی کرارہ سا جواب دے دے گی ـ
4متشاعرہ ہمیشہ صرف وہیں کمنٹ کرے گی جہاں اچھے اچھے شعرا نے کمنٹس کیے ہوں کیونکہ ظاہر اچھے شعرا برے شعر پر یا خارج از وزن شعر پر تو وااہ واااہ نہیں کریں گے ناں!
5 چاہے دنیا ادھر کی ادھر ہوجائے لیکن متشاعرہ فی البدیہہ شعر کہنے کی حامی نہیں بھرے گی۔
6 اکثر دیکھنے میں آیا ہے کہ متشاعرہ نوجوان بھی ہو تو بھی اس کا کلام پرانے اسلوب کا ہوگا کیونکہ اس کے نزدیک بزرگ شعرا ہی اچھا شعر کہتے ہیں (تاہم نوجوان بھی اب پیش پیش ہیں)
7 زیادہ تر کلام ان کے اپنی حسن کی شان میں ہوگاـ
درج بالا نشانیاں مختلف قسم کی متشاعرات سے اخذ کی گئی ہیں ضروری نہیں کہ سبھی نشانیاں ہر ایک میں ہوں کسی میں دو کسی میں تین اور کسی میں تمام بھی پائی جا سکتی ہیں ـ واللہ علم

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں